مجلس مشاورت بہار امیر شریعت مولانا احمد ولی فیصل رحمانی کے ساتھ مضبوطی کے ساتھ کھڑا ہے : ڈاکٹر سید ابوذر کمال الدین

مجلس مشاورت بہار امیر شریعت مولانا احمد ولی فیصل رحمانی کے ساتھ مضبوطی کے ساتھ کھڑا ہے : ڈاکٹر سید ابوذر کمال الدین

مظفر پور، 18/دسمبر (وجاہت، بشارت رفیع) امارت شرعیہ بہار جھارکھنڈ اڑیسہ پورے مشرقی ہند میں مسلمانوں کا سب سے قدیم اور با وقار ادارہ ہے جس پر مسلمانوں کے سواد اعظم کا اتفاق ہے اور وہ تمام ملی معاملات میں اس کی طرف رجوع بھی کرتے ہیں اور رہنمائی بھی چا ہتے ہیں۔ بہار میں کسی دوسرے ادارے کو یہ فخر اور اعزاز حاصل نہیں ہے۔ یہ باتیں صدر مجلس مشاورت بہار ڈاکٹر سید ابو ذر کمال الدین نے کہی ہے۔ وہ مزید کہتے ہیں کہ امارت شرعیہ کا قیام اس وقت ہوا جب بہار بطور صوبہ بنگال سے الگ ہوا۔ اس وقت اڑیسہ صوبہ بہار میں شامل تھا۔جب اڑیسہ بہار سے الگ صوبہ بنا تو امارت کی شوریٰ نے اڑیسہ کو امارت کے شرعی نظم کے تحت حسب سابق قایم رکھنے کافیصلہ کیا۔ اسی طرح سن دو ہزار میں جھارکھنڈ کو الگ صوبہ بنایا گیا تو اس وقت بھی شوریٰ نے سابقہ نظم کو باقی رکھا ۔ یہ فیصلہ امارت شرعیہ کی مرکزی نظم اور اس کی شوریٰ ہی لے سکتی ہے کہ جھارکھنڈ کے نظم کو الگ کر کے وہاں نی امارت قائم کی جاے۔میرے علم کی حد تک امارت شرعیہ نے ایسا کوی فیصلہ نہیں لیا ہے۔ اس صورت میں اگر کوی شخص خود کو امیر ہونے کا اعلان کرتاہے تو اس کی یہ حرکت غیر شرعی غیر قا نونی خلاف نظم غیر اخلاقی ۔ ظلم گناہ اور شرارت انگریزی اور فتنہ پرور ی مانی جائے گی ۔جس کی پوری مسلم ملت شدید الفاظ میں مزمت کرتی ہے اور ایسے فتنہ پروروں سے اپنی برآ ت کا اعلان کرتی ہے اور ملت اسلامیہ بہار جھارکھنڈ اڑیسہ سے درخواست کرتی ہے کہ نہ صرف ان فتنہ پروروں سے خود کو دور رکھیں بلکہ ملت دشمن طاقتوں کے ذریعہ ملت اور اس کے اتحاد کو توڑنے کی جوناپاک کوشش کی جارہی ہے اس کو ناکام کر نے میں کوی کسر نہ چھوڑیں۔ جس کا ایک طریقہ یہ ہےکہ ایسے تمام لوگوں سے اپنی برآءت کا اعلان کریں اور کسی درجہ میں ان کی پزیرائی نہ کریں، جناب کمال الدین نے مسلم مجلس مشاورت بہار کے جانب سے یہ اپیل کی کہ اس آزمائش کی گھڑی میں پوری مضبوطی سے امیر شریعت مولانا فیصل رحمانی مد ظلہ عالی کے ساتھ کھڑی ہے اور بہار میں مشاورت سے وابستہ تمام افراد سے گذارش کرتی ہے کہ وہ اپنے اپنے مقام پر امارت کے ساتھ پوری مضبوطی سے کھڑے رہیں اور عوام میں کوی غلط فہمی پیدا نہ ہونے دیں۔مجھے امید ہے یہ فتنہ جلد فرو ہو جاے گا۔ انشاء االلہ

اپنے مضامین اور خبر بھیجیں


 udannewsdesk@gmail.com
 7462884092

ہمیں فیس بک پیج پر بھی فالو کریں


  https://www.facebook.com/udannewsurdu/

loading...
udannewsdesk@gmail.comآپ بھی اپنے مضامین ہمیں اس میل آئی ڈی پر بھیج سکتے ہیں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *