دنيا كے ایک ہزار خوش نصيب مسلمان سال 2024ء ميں شاہى مہمان كى حيثيت سے عمرہ ادا كريں گے

دنيا كے ایک ہزار خوش نصيب مسلمان سال 2024ء ميں شاہى مہمان كى حيثيت سے عمرہ ادا كريں گے
ڈاكٹر محمديوسف حافظ أبو طلحہ
سعودى حكومت كا يہ معمول رہاہے كہ ہر سال پورى دنيا سے نمائندہ شخصيتوں كو شاہى مہمان كى حيثيت سے حج وعمرہ يا صرف عمرہ كے لئے دعوت ديتى ہے، يہ دعوت اپنے جلو ميں استقبال، ضيافت اور اعزازوتكريم كے ايسے مظاہر كو سميٹے ہوتى ہے جن كى حقيقى تصوير لفظوں ميں پيش نہيں كى جاسكتى، ان كا حقيقى تصور وہى شخص كرسكتا ہے جنہيں يہ سعادت نصيب ہوئى ہو، يا جنہيں ان سعادتمندوں كے ساتھ اس سفرِ سعادت ميں كسى طرح كى خدمت يا رفاقت كا موقع نصيب ہوا ہو- روانگى سے لے كر واپسى تك ان كى نہايت شاندار ضيافت كى جاتى ہے، طعام وقيام كا ہائى فائى نظم كيا جاتاہے، مطلوبہ عبادت كى ادائيگى كے لئے انہيں سركارى عملہ كى مكمل نگرانى ميں سارى ممكنہ سہوليات فراہم كى جاتى ہيں، مختلف مشہور مقامات، سركارى اور غير سركارى اہم اداروں كى وز، ٹ كرائى جاتى ہے، مختلف نمائندہ شخصيوتوں سے ان كى ملاقات كرائى جاتى ہے اور انہيں مختلف قسم كے ہدايا وتحائف سے نوازا جاتا ہے، بلكہ پہونچتےہى انہيں أيك متعينہ رقم بطور ہديہ دى جاتى ہے تاكہ وہ اپنے لئے اور اپنے خويش واقارب كے لئے اپنى من پسند چيزيں خريد سكيں- وغيرہ وغيرہ…..
اسى روايت كو آگے بڑھاتے ہوئے 03/جنورى (2024ء) كو خادمِ حرمين شريفين شاہ سلمان بن عبد العزيز نے حكم صادر كيا ہے كہ پورى دنيا سے أيك ہزار مسلمان اس سال شاہى مہمان كى حيثيت سے عمرہ ادا كريں گے، اور ضيافت كى مكمل ذمہ دارى وزارت برائے اسلامى أمور كى ہوگى- واضح رہے كہ اس تعداد ميں شاہى مہمان كى حيثيت سے حج كرنے والے داخل نہيں ہيں، بلكہ ان كى تعداد كا اعلان موسم حج ميں ہوگا –
اس حكم كے صادر ہوتے ہى اسلامى امور كے وزير عزت مآب ڈاكٹر عبد العزيز بن عبد اللطيف آل الشيخ نے خادمِ حرمين شريفين شاہ سلمان بن عبد العزيز اور ولي عہد شہزادہ محمد بن سلمان كى خدمات كو سراہتے ہوئے انہيں خوب خوب دعائيں ديں، اور ان كا شكريہ ادا كيا، اور واضح كيا كہ يہ شاہى فرمان در حقيقت اس بات كا غماز ہے كہ سعودى حكومت اسلام اور مسلمانوں كى خدمت كے جذبہ سے سرشار ہے، اور ان كے درميان اخوت وبھائى چارگى كو مستحكم كرنے كى طرف كوشاں ہے، اور اسلامى كاز كے مختلف ميدان ميں كام كرنے والى نمائندہ شخصيتوں كے درميان مضبوط تعلقات كے قيام اور نفع بخش تجربات كے تبادلے كے تئيں نہايت سنجيدہ ہے- وزير موصوف نے يہ بھى واضح كيا كہ خادم حرمين شريفين اور ان كے ولى عہد كى طرف سے وزارت برائے اسلامى أمور كو مكمل معنوى اور مادى سپورٹ حاصل ہے جو اسلامى كاز كو آگے بڑھانے ميں سنگ ميل كى حيثيت ركھتى ہے-
وزير موصوف كے علاوہ عزت مآب ڈاكٹر عبد الرحمن سديس (صدر مسجد حرام ومسجد نبوى برائے دينى امور) اور ديگر نمائندہ شخصيات نے اس فرمان كو سراہتے ہوئے خادم حرمين شريفين اور ولى عہد كو خوب خوب دهائيں دى ہيں-
اس شاہى حكم كو عملى جامہ پہنانےكے لئے وزارت برائے اسلامى أمور نے اپنے متعلقہ مختلف اداروں كو گائيڈ لائن جارى كردياہے، سارے متعلقہ ادارے اپنے مفوضہ عمل ميں لگ چكے ہيں، اور ارض مقدسہ تك معتمرين كے پہونچنے كا سلسلہ بھى شروع ہوچكا ہے-
رب العالمين ان خدمات كو شرفِ قبزليت بخشے، اور معتمرين كى عبادتوں كو قبول فرمائے اور سعودى حكومت پر اپنى توفيق كا سايہ دراز ركھے-

اپنے مضامین اور خبر بھیجیں


 udannewsdesk@gmail.com
 7462884092

ہمیں فیس بک پیج پر بھی فالو کریں


  https://www.facebook.com/udannewsurdu/

loading...
udannewsdesk@gmail.comآپ بھی اپنے مضامین ہمیں اس میل آئی ڈی پر بھیج سکتے ہیں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *