سعودی حکومت کی ضیافت میں عمرہ کی سعادت

سعودی حکومت کی ضیافت میں عمرہ کی سعادت
د. منظور أحمد محمد عالم
میقات سے عمرہ کی نیت کرکے مکہ جانا اور خانہ کعبہ کا طواف کرنا‘ صفا ومروہ کی سعی کرنا‘ اور اپنے سر کے بال کو مکمل طور پر مونڈھنا یا چھوٹے کروانا عمرہ کہلاتا ہے.
عمرہ کرنا ایک اہم عبادت ہے‘ ایک صحیح حدیث میں آپ صلى اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا: “یکے بعد دیگرے بار بار حج وعمرہ کرتے رہو‘ اس لئے کہ یہ دونوں غریبی اور گناہوں کو ایسے ختم کرتے ہیں جیسے دہکتے ہوے بھٹی لوہے کے زنگ اور سونے چاندی کے میل کچیل کو ختم کرتی ہے. اور ایک حدیث میں آپ صلى اللہ علیہ وسلم فرماتے ہیں : “ایک عمرہ‘ دوسرے عمرے تک کے درمیان سرزد ہونے والے گناہوں کا کفارہ بن جاتا ہے.
بالخصوص ماہ رمضان میں عمرہ کرنا حج کے برابر ہے. ایک انصاری خاتون صحابیہ سے آپ صلى اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: “جب ماہ رمضان آئے تو اس میں عمرہ کرلینا کیونکہ رمضان میں عمرہ کرنا حج کے برابر ہے” اور ایک روایت میں ہے کہ آپ صلى اللہ علیہ وسلم نے فرمایا “رمضان میں عمرہ کرنا میرے ساتھ حج کرنے کے برابر ہے”.
بہر حال حج وعمرہ کے بہت سے فوائد ہیں جنہیں حاصل کرنے کی تمنا ہر مسلمان کرتا ہے‘ بیت اللہ کی زیارت کے لئے بہت سے لوگ عمر بھر پائی پائی جٹاتے ہیں اور ایک بڑی رقم اس عبادت کی سعادت کو پانے کے لئے خرچ کردیتے ہیں جبکہ بہت سے مسلمان ایسے بھی ہیں جن کے پاس مادی أسباب مہیا ہیں لیکن زیارت حرمین کی سعادت سے وہ محروم ہیں. ایسے لوگوں کو اپنے ایمان وعمل کا جائزہ لینا چاہئے اور اپنا احتساب کرنا چاہیےاور ساری رکاوٹوں اور خواہشات نفسانی وشیطانی کو کچلتے ہوئے أرض حرمین کے لئے نکل جانا چاہئے اور عمرہ وحج جیسی عظیم عبادتوں کو ادا کرنا چاہئے .
مملکت سعودی عرب حرمین کی توسیع میں کارہائے نمایاں انجام دے رہی ہے‘ حاجیوں ومعتمرین کی خدمت کو اپنے لئے باعث شرف سمجھتی ہے‘ اور وہاں کے بادشاہوں‘ شہزادوں اور مخبرین کی ریت وتاریخ رہی ہے کہ اپنے خرچے پر بہت سے مسلمانوں کو حج وعمرہ ادا کرنے کی سعادت بخشتے ہیں‘ اہل نظر اور مملکت سعودی عرب سے وابستہ طلبہ واساتذہ اور مزدور طبقہ اور دیگر متعلقین اس امر سے بخوبی واقف ہیں.
ملک سلمان بن عبد العزیز حفظہ اللہ کی دعوت پر لبیک کہتے ہوے امسال ۲۰۲۴ میں مختلف ملکوں سے ایک ہزار مسلمان عمرہ کی سعادت حاصل کریں گے‘ دیار حرم میں ان کا فرحت بخش استقبال ہوگا‘ وہ شاہی مہمان ہوں گے اور انہیں ملکی ضیافت ومکرمت حاصل ہوگی‘ تحفے تحائف سے نوازے جائیں گے‘ عمدہ رہائش گاہوں میں ٹہرائے جائیں گے‘ ‘ لذیذ ومتنوع کھانوں سے مہمان نوازی کی جائے گی‘ آرام دہ سواریوں میں مقامات مقدسہ کی زیارت کروائی جائے گی ‘ ان کی خدمت کے لئے لوگ مأمور ہوں گے ‘ الغرض ہر طرح کی وہ سہولت حاصل ہوگی جس کا تصور بھی وہ نہیں کرپائے ہوں گے.
یقینا خوش نصیب ہوں گے وہ لوگ جو شاہ سلمان حفظہ اللہ کے مہمان بن کر ملک الملوک کے سامنے سر بسجود ہوں گے اور عبادت کی لذت محسوس کریں گے.
اللہ تعالى سے دعا ہے کہ اللہ تعالى شاہ سلمان حفظہ اللہ کی جملہ مساعی جمیلہ کو قبول فرمائے ‘ اور انہیں صحت وعافیت سے نوازے ‘ اور اسلام ومسلمانوں کی خدمت کی توفیق دے ‘ اور دیگر مسلم حکمرانوں کو بھی ان کے نقش قدم پر چلنے کی توفیق عطا فرمائے . آمین

اپنے مضامین اور خبر بھیجیں


 udannewsdesk@gmail.com
 7462884092

ہمیں فیس بک پیج پر بھی فالو کریں


  https://www.facebook.com/udannewsurdu/

loading...
udannewsdesk@gmail.comآپ بھی اپنے مضامین ہمیں اس میل آئی ڈی پر بھیج سکتے ہیں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *