ہم چراغ کے محافظ

ہم چراغ کے محافظ

 

ذبیح اللہ نور تیمی،بھوادہ مدہوبنی

 

چراغ کی حقیقت اس میں رکھے گئے تیل کےبعد ہی ہو سکتی ہے ورنہ خالی بوتل سے زیادہ اس کی اہمیت نہیں رہ جاتی ۔چراغ اپنے ارد گرد کے سامانوں ، اپنے حلقے بیٹھے افراد کو روشنی عطا کر زندگی کی گاڑی کو رواں دواں رکھتا ہے اور یہ بھی حقیقت ہے کہ چراغ کی لو ہوا کے تھپیڑوں اور کھلی فضاؤں میں اپنی زندگی کی شام کرتے دکھائی دیتی ہے گویا چراغ کی راز حیات ہوا کے عدوم میں پنہاں اور کھلی فضاؤں سے دوری ہی میں اس کے لے بقائے دوام ہے ۔دین اسلام بھی سراج منیر ہی کے مثل لوگوں کے اذہان و قلوب کو منور اور صراط مستقیم سے بھٹکتی انسانیت کو روشن شاہراہ پر لا کھڑا کرنے والا واحد دین ہے اس کی آن بان شان کو باقی رکھنا ہماری سب سے بڑی ذمہ داری ہے ورنہ وہ ہوا کے تھپیڑوں یعنی لوگوں کے پروپیگنڈے اور دشمن کے ہتھکنڈے کے باعث اپنی روشنی بیکھیر نے کے کام اس سے کم ہو جائیں گے اور اپنی دھیمی روشنی سے دنیا کو چکا چوند کیسے کرسکتا ؟ہم چراغ کے محافظ ہیں اس کو کھلی فضا اور مسموم ہوا سے بچانا ہماری اہم ذمہ داری ہے ورنہ یہ روشن چراغ اپنی روشنی بیکھیرنے کے لے ترس جائے۔

اپنے مضامین اور خبر بھیجیں


 udannewsdesk@gmail.com
 7462884092

ہمیں فیس بک پیج پر بھی فالو کریں


  https://www.facebook.com/udannewsurdu/

loading...
udannewsdesk@gmail.comآپ بھی اپنے مضامین ہمیں اس میل آئی ڈی پر بھیج سکتے ہیں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *