دعوت و تبلیغ کے میدان میں سعودی حکومت کی ایک بڑی کامیابی

دعوت و تبلیغ کے میدان میں سعودی حکومت کی ایک بڑی کامیابی
محمد وسیم راعین

دعوت دین امت مسلمہ کی اولین ذمہ داریوں میں سے ہے ۔اسی دعوت سے اس امت کی خیریت وابستہ ہے اللہ تعالی کا ارشاد ہے : {كُنْتُمْ خَيْرَ أُمَّةٍ أُخْرِجَتْ لِلنَّاسِ تَأْمُرُونَ بِالْمَعْرُوفِ وَتَنْهَوْنَ عَنِ الْمُنْكَرِ وَتُؤْمِنُونَ بِاللَّهِ } [آل عمران: 110]۔ “تم بہترین امت ہو جو لوگوں کے لئے پیدا کی گئی ہے تم نیک باتوں کا حکم کرتے ہو اور بری باتوں سے روکتے ہو اور اللہ تعالیٰ پر ایمان رکھتے ہو “۔

دنیا میں اسلام اورصحیح دین کی نعمت سے بڑھ کر کوئی اور نعمت نہیں ہے کیونکہ آخرت کی ابدی سعادت اسی نعمت سے مربوط ہے ۔اس عظیم نعمت سے سرفراز ہونے کا تقاضا بھی یہی ہے کہ اس دین کی تبلیغ کی جائے اس کی تعلیم سے دوسروں کو بھی روشناس کرایا جائے ۔

بھٹکی ہوئی انسانیت کے لئے اللہ تعالی ہر زمانہ میں انبیاء کرام علیہم السلام کو اسی دعوت کے لئے مبعوث کرتے رہے جو اپنی قوم کو گمراہی سے نکال کر سیدھی راہ کی طرف لانے میں ہر قسم کی کوشش کرتے رہے ۔ اس دین کی تبلیغ میں انہوں نے کوئی کسر نہیں چھوڑی ۔ اس سیاق میں نوح علیہ السلام کے سلسلہ میں اللہ تعالی کے اس فرمان کو پڑھیے اور ان کی اس دین کی تبلیغ میں کوششوں کا اندازہ لگاییے: { قَالَ رَبِّ إِنِّي دَعَوْتُ قَوْمِي لَيْلًا وَنَهَارًا (5) فَلَمْ يَزِدْهُمْ دُعَائِي إِلَّا فِرَارًا (6) وَإِنِّي كُلَّمَا دَعَوْتُهُمْ لِتَغْفِرَ لَهُمْ جَعَلُوا أَصَابِعَهُمْ فِي آذَانِهِمْ وَاسْتَغْشَوْا ثِيَابَهُمْ وَأَصَرُّوا وَاسْتَكْبَرُوا اسْتِكْبَارًا (7) ثُمَّ إِنِّي دَعَوْتُهُمْ جِهَارًا (8) ثُمَّ إِنِّي أَعْلَنْتُ لَهُمْ وَأَسْرَرْتُ لَهُمْ إِسْرَارًا } [نوح: 5 – 9] ” (نوح علیہ السلام نے) کہا اے میرے پروردگار! میں نے اپنی قوم کو رات دن تیری طرف بلایا ہے مگر میرے بلانے سے یہ لوگ اور زیادہ بھاگنے لگ میں نے جب کبھی انہیں تیری بخشش کے لئے بلایا انہوں نے اپنی انگلیاں اپنے کانوں میں ڈال لیں اور اپنے کپڑوں کو اوڑھ لیا اور اڑ گئے اور پھر بڑا تکبر کیا، پھر میں نے انہیں با آواز بلند بلایا۔ بیشک میں نے ان سے اعلانیہ بھی کہا اور چپکے چپکے بھی” ۔

نبوت کے اسی سلسلہ کی آخری کڑی نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم تھے آپ نے دعوت وتبلیغ کی ذمہ داری بخوبی نبھائی اور مختصر سے مدت میں اللہ تعالی نے آپ کو بڑی کامیابوں سے سرفراز کیا اور پورے جزیرہ عرب پہ مسلمانوں کی کا کنٹرول آپ کی زندگی میں ہی ہوگیا ۔ دعوت و تبلیغ کی یہی ذمہ داری اب وارثین أنبیاء پہ عائد ہوتی ہے ۔

تبلیغ کا یہ عمل بہت ہی معزز اور بہت ہی فضیلت والا ہے اللہ تعالی کا فرمان ہے : { وَمَنْ أَحْسَنُ قَوْلًا مِمَّنْ دَعَا إِلَى اللَّهِ وَعَمِلَ صَالِحًا وَقَالَ إِنَّنِي مِنَ الْمُسْلِمِينَ } [فصلت: 33] “اور اس سے زیادہ اچھی بات والا کون ہے جو اللہ کی طرف بلائے اور نیک کام کرے اور کہے کہ میں یقیناً مسلمانوں میں سے ہوں “۔

أمت کو آج جن پریشانیوں کا سامنا ہے ان سے چھٹکارے کے اسباب میں سے ایک اہم سبب اس فریضہ کی انجام دہی بھی ہے نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کا فرمان ہے : وَالَّذِي نَفْسِي بِيَدِهِ لَتَأْمُرُنَّ بِالمَعْرُوفِ وَلَتَنْهَوُنَّ عَنِ الْمُنْكَرِ أَوْ لَيُوشِكَنَّ اللَّهُ أَنْ يَبْعَثَ عَلَيْكُمْ عِقَابًا مِنْهُ ثُمَّ تَدْعُونَهُ فَلاَ يُسْتَجَابُ لَكُمْ.(ترمذي :2169) “اس ذات کی قسم جس کے ہاتھ میں میری جان ہے! تم معروف (بھلائی) کا حکم دو اورمنکر(برائی) سے روکو، ورنہ قریب ہے کہ اللہ تعالیٰ تم پر اپنا عذاب بھیج دے پھر تم اللہ سے دعا کرواورتمہاری دعاء قبول نہ کی جائے”۔

چونکہ روزی روٹی کے سلسلہ میں مسلم وغیر مسلم کی بڑی تعداد سعودی میں مقیم ہیں ۔سعودی حکومت نے ان کی دینی ضرورت کی تکمیل کے لئے سعودی کے ہر علاقے میں دعوہ سینٹر س کا قیام عمل میں لایا ہے جن میں مختلف ممالک کی زبان جاننے والے والےداعی متعین ہوتےہیں جو غیر مسلموں کو اسلام کی دعوت دیتےہیں اور مسلمانوں کو دین کی تعلیمات سے روشناس کراتے رہتے ہیں اور یہ ان کی ذمہ داری ہوتی ہے ۔

اسلام دین فطرت ہے ایک غیر مسلم صاف ستھرے ماحول میں توحید کی دعوت سنتا ہے اور اسلامی احکام کے مطابق زندگی گزارنے والوں کو دیکھ کر بہت سے لوگ اسلام قبول کر لیتے ہیں اور خود کو دائمی عذاب سے محفوظ کر لیتے ہیں۔

سعودی عرب نے اس میدان میں بڑی کامیا بی حاصل کی ہے حالیہ اعداد و شمار اس کی عکاسی کرتے ہیں ۔وزارت برا مذہبی امور کی طرف سے شائع شدہ اعداد و شمار کے مطابق پچھلے پانچ سالوں میں کل پروگراموں کی تعداد بانوے لاکھ باسٹھ ہزار چار سو چھ (9262406) ہے اور ان پانچ سالوں میں مشرف بہ اسلام ہونے والوں کی تعداد تین لاکھ سینتالیس ہزار چھ سو چھیالیس (3,47,646) ہے ۔

اس عظیم کامیابی پر خادم الحرمین الشریفین حفظہ اللہ اور ولی عہد ایدہ اللہ اور مذہبی امور کے وزیر عبداللطیف آل شیخ کی کوششوں کا بڑا دخل ہے ۔ اللہ تعالی سے دعاء ہے کہ ان کی گوناگوں خدمات کو قبول کرے اور مزید کی توفیق دے اور اسلام میں داخل ہونے والوں کے دلوں میں ایمان کو راسخ کردے اور دین میں ان کے قدم جمادے آمین۔

اپنے مضامین اور خبر بھیجیں


 udannewsdesk@gmail.com
 7462884092

ہمیں فیس بک پیج پر بھی فالو کریں


  https://www.facebook.com/udannewsurdu/

loading...
udannewsdesk@gmail.comآپ بھی اپنے مضامین ہمیں اس میل آئی ڈی پر بھیج سکتے ہیں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *