آ گھر کو لوٹ چلیں

 

ارمان تیمی

 

 

گھر، گھر ہوتا ہے ، چاہے وہ گری ہوئی کٹیا ، ٹوٹی ہوئی جھونپڑی ، عالیشان بنگلہ یا فلک بوس شیش محل ہو ۔ ہر شخص اپنا بچپنا اسی فضا میں گزارتا ہے ، اسی وادی میں اہل خانہ کا پیار بٹوڑتا ہے ،

جہاں ماں کی مایا ، والد کا دلار بے شمار ہوتا ہے ،

دادی کا ناز اور دادا کا آن بان شان ہوتا ہے ،

پھوپھی کی محبت اور چچا کا دل و جان ہوتا ہے ۔

جہاں میلوں ٹھیلوں کی زیارت ، گرد و نواح کا چکر عام ہوتا ہے ،

والدین کی لوری اور دادا ، دادی کے رنگ برنگ قصہ بسیار ہوتا ہے ۔

 

انسان انہیں مراحل سے گزرتا ہوا جوانی کی دہلیز پر قدم رنجا ہوتا ہے اور دیکھتے دیکھتے ازدواجی زندگی سے منسلک ہو جاتا ہے پھر مرور ایام کے ساتھ ذمہ داریاں بڑھتی چلی جاتی ہیں اور ایک دن حالات و ظروف ان کی بھرپائی کی خاطر اسے بے گھر کر دیتی ہیں اور بیگانوں کی بستی میں لا کھڑی کر دیتی ہیں ۔ اگر بس چلے تو وہ کبھی پرائی جگہ کوسوں دور نہ جائے اور نہ ہی غیروں کی بات و دھتکار سنے ۔

 

گھر کی اہمیت ہر زمانے میں رہی ہے، اس کی یاد سب سے حسین یادیں ہوتی ہیں کہتے ہیں کہ مصیبت کے وقت اسی کو یاد کرکے چین و قرار ملتا ہے ۔ اب ذرا ہم دور دراز پھنسے ہوئے ان لوگوں کے بارے میں سوچیں کہ کن کو معلوم تھا، کورونا وائرس وبائی مرض پیروں میں بیڑیاں ڈال دیگا ، کام کاج بند ہو جائے گا ، کھانے کا معقول انتظام درہم برہم ہو جائے گا اور اتنا طول پکڑے گا کہ مرنے تک کی نوبت آ جائے ۔ ہر شخص جانتا ہے جب کوئی وسیلہ ختم ہوتا ہے تو اس کی اہمیت بذات خود بڑھ جاتی ہے آج ہو بہو پردیسیوں کا گھر جانے کی اہمیت ہر جگہ راستے بند ہوجانے اور گاڑیاں تھم جانے سے ہو رہی ہے ایسے میں وہ کب تک ضبط صبر کریں گے اور کیسے چین و سکون سے رہیں گے ۔ ایک بڑا سوال ہے ۔

مشہور شاعرہ عصمت چغتائی نے سچ کہا تھا۔

گھر سے نکلے دیر ہوئی ہے گھر کو لوٹ چلیں

گونگی راتیں دھوپ کڑی ہے گھر کو لوٹ چلیں

ضرورت ہے بڑے لوگوں کو ہم دردی استوار کرنے ، مرتی انسانیت کو بچانے ، بے کسوں کا سہارا بننے اور دل سے نکلی دعاؤں سے مالا مال ہونے کا اس سے اچھا موقع شاید ہی ملے۔

اپنے مضامین اور خبر بھیجیں


 udannewsdesk@gmail.com
 7462884092

ہمیں فیس بک پیج پر بھی فالو کریں


  https://www.facebook.com/udannewsurdu/

loading...
udannewsdesk@gmail.comآپ بھی اپنے مضامین ہمیں اس میل آئی ڈی پر بھیج سکتے ہیں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *