کیاکبھی سوچابھی تھا، ایسا رمضان بھی آئےگا

                     

از: *محمدضیاءالحق ندوی*

آج جب پوری دنیاعذاب خداوندی ،آزمائش وغضب الہی کی زدمیں ہے ،ان حالات میں رمضان مبارک ہمیشہ کی طرح اپنی تمام تر رعنائیوں ،رحمتوں ،برکتوں اورخوبیوں کےساتھ سایہ فگن ہے ،لیکن لاک ڈاؤن کی وجہ سے مسلمانوں میں چہل پہل،گہما گہمی،جوش وخروش اور بازار کی رونقیں ماند ہیں،ہرطرف سناٹا ہے،وہ سڑکیں جوافطارسے چند گھنٹے قبل لوگوں سے بھرجاتی تھیں ویران ہیں ،افطارکے وقت کا وہ پھل ، نوع بنوع کی میٹھائیاں اور اشیاء خورد و نوش کی خریداری کا سماں سال گزشتہ کی رونق یاددلاتاہے ،سڑکوں کے کنارے کی چھوٹی چھوٹی دکانیں، خوشی خوشی خریدتے لوگوں کے چہروں پرروزے کی نظر آتی برکتوں کونگاہیں تلاش کررہی ہیں ،افطار کی ہماہمی اوررونق کو کورونا کی نظر بدلگ گئ اور رمضان کی رونقیں گھروں کےاندر تک محدود ہوکر رہ گئیں ہیں.

*قارئین کرام!* ماضی میں لوگ ماہ مبارک کےآنے کے ساتھ ہی گلیاں،بازار بھی سجالیتے تھے اور رمضان مبارک کی روایتی رونقوں کا بازار خوب گرم رہتا تھا لیکن سال رواں اس کیف و سرور اور روح پرور ماحول نظر بد کا شکار ہے مسلمانوں کےلئے مساجد کےدروازے مقفل ہیں جس سے ان کےدل مغموم ہیں بدحواسی کا عالم ہے اورمساجدکےدر و محراب نمازیوں کےلئے نوحہ کناں ہے ،لیکن ان غم زدہ اور رنجیدہ خاطر امت مسلمہ کےلئے اللہ جل جلالہ وعم نوالہ کی جانب سے یہ اعلان ہے “قل يا عبادي الذين اسرفوا على انفسهم لاتقنطوامن رحمةالله ان الله يغفرالذنوب جميعا انه هوالغفورالرحيم “سورة الزمر۵۳

ترجمہ :کہ دے اے

بندومیرےجنہوں نےکہ زیادتی کی ہے اپنی جان پر آس مت توڑو اللہ کی مہربانی سے بےشک اللہ بخشتاہےسب گناہ وہ جو ہے وہی ہے گناہ معاف کرنے والا مہربان “تفسیر عثمانی

*قارئین کرام!* آج جب کہ پوری دنیا لاک ڈاؤن کے دور سے گزر رہی ہے ، عذاب الہی کی لپیٹ میں ہے ،ان حالات میں رمضان مبارک کی آمد یقینا امت مسلمہ کےلئے منجانب اللہ رحمتوں کا نزول ہے ،گویا انگارے برساتی گرمی میں رحمت کی بھینی بھینی پھوار . کووڈ. ۱۹ کی روح فرسا بارش میں رمضان مبارک رحمتوں کا پھول بن کر آیا ہے اس لئے ضرورت اس بات کی ہے کہ ہم مسلمان ایسے وقت میں حکومت کےقوانین و ضوابط کا خیال رکھتے ہوئے اپنے اپنے گھروں میں والدین،بیوی اوربال بچوں کےساتھ روزے ،نماز و تروایح ،ذکر و تلاوت کا خوب سے خوب تر اہتمام کرکے اپنے دل کی دنیا کو رب کریم کی محبت سے آباد کرلیں اور اس کے مقدس کلام سےجلا پاکر ایک صالح انقلاب کی تگ و دو کرنے والے بن جائیں .

*کبھی سوچابھی تھا،رمضان ایساآئےگا مسجدیں ویران یہ منظرنہ دیکھاجائیگا*

اللہ تعالی سے دعاگو ہوں کہ ہم مسلمانوں کی عبادت قبول فرمائے اور اس آفت وبلاسے نجات فرمائے.آمین یارب العالمین

ـــــــــــــــــــــــــ *محمدضیاءالحق ندوی*

 

اپنے مضامین اور خبر بھیجیں


 udannewsdesk@gmail.com
 7462884092

ہمیں فیس بک پیج پر بھی فالو کریں


  https://www.facebook.com/udannewsurdu/

loading...
udannewsdesk@gmail.comآپ بھی اپنے مضامین ہمیں اس میل آئی ڈی پر بھیج سکتے ہیں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *