لاک ڈاؤن اور آمد رمضان المبارک

.

………………………………….

از:سرفراز عالم ابوطلحہ ندوی.

……………………………………

وقت کی تغيرات کے ساتھ ملک میں جہاں لاک ڈاؤن نے یک لخت معمولات زندگی کو پوری طرح متاثر کر رکھا ہے، جس کی وجہ سے پورے ملک میں جگہ جگہ پولیس تعینات کر دی گئی ہے، ہر چہار جانب سناٹا چھایا ہوا ہے، اور یہ ماحول صرف وطن عزیز ہی کا نہیں ہے، بلکہ اس وقت لاک ڈاؤن سے پوری دنیا متاثر ہے، ان تمام چیزوں کے باوجود مسلمانوں کے لئے ماہ رمضان اپنی رحمتوں ، برکتوں، اور خوشیوں کو ساتھ لے کر میدان عمل میں حاضر ہے، ہاں یہ وہی مہینہ ہے جس کے آمد کی تمنا ہر کسی کو رہترہتا ہے، کہ کب آئے گا، وہ مہینہ جو گناہوں کی معافی کا سبب بنتا ہے، ایسا مہینہ جس میں لوگ خوب عبادات و بندگی، عاجزی و انکساری انابت الی اللہ، توکل علی اللہ، صدقہ و خیرات، ہمدردی و رواداری، اخوت و بھائی چارگی، اور خشوع وخضوع کو اپنا زیور بنا کر فکر آخرت کی کامیابی کو تلاشتا ہے، جس سے ایمان میں تازگی اور روشنی پیدا ہوتی ہے، اور یہی نہیں بلکہ یہ مہینہ بندوں کو جنہم سے آزادی دلاتا ہے، اس مہینہ کی سب سے بڑی خصوصیت یہ ہے، کہ اس ماہ مبارک میں شیطان رجیم کو باندھ دیا جاتاہے، اور جہنم کے دروازے بند کر دئے جاتے ہیں ، اسی طرح جنت کے دروازے کھول دیئے جاتے ہیں ، یہ رہی رمضان المبارک کی فضیلت اور اس کی اہمیت ۔

اب سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ کیسے ماہ رمضان میں عبادات سر انجام دئے جائیں ، جبکہ ملک میں لاک ڈاؤن ہے، تو اس کا جواب یہ ہوگا، کہ ہم اپنے گھروں ہی میں تمام تر عبادات کریں، اللہ سے دعائیں کریں، کہ حالات بہتر سے بہتر ہوں، تاکہ ہم رمضان المبارک کا خوب اچھے سے استقبال کرسکیں،

لاک ڈاؤن میں رمضان کا استقبال کیسے کریں؟

یہ ایک اہم سوال ہے،کہ جس طرح ہم اور آپ دیگر سالوں میں رمضان کی آمد پر خوشیاں اور مبارک بادیاں پیش کیا کرتے تھے، اور خوب اپنے چاہنے والوں کو رمضان کی آمد پر خوش آمدید کہا کرتے تھے، ٹھیک اسی طرح ہم اپنے رشتہ داروں کو مبارک باد پیش کیا کریں، چاہے وہ فون پر ہی کیوں نہ ہو، ایک دوسرے کو تلقین کریں، کہ ماہ رمضان میں قرآن مجید کی تلاوت کریں، نفل نمازوں کی پابندیاں کریں، نماز تراویح کو ایام لاک ڈاؤن میں اپنے گھروں ہی میں ادا کریں، رمضان المبارک کے روزے خوب دلچسپی، اور اخلاص و للہیت کے ساتھ رکھا کریں،اپنی عبادت میں ریاکاری دکھاوا ہرگز نہ کریں، اپنے قیمتی وقت کو ضائع نہ کریں، اور یہ معمول بنالیں، کہ ہمیں روزانہ ایک پارہ قرآن کی تلاوت کرنی ہے، زیادہ سے زیادہ نمازوں کی پابندیاں کریں، صلاۃ اللیل اور قیام اللیل کو اپنا مشغلہ بنا لیں، اکیلے میں خوب رویا کریں، اللہ سے مانگا کریں، اپنے آس پاس کے غریب، مزدور، لاچار، اور بے بس لوگوں کی امداد کریں، راتوں کو جاگ کر تہجد کی نماز ادا کریں، کیونکہ رمضان سراپا خیر و برکت کا مہینہ ہے، جس قدر ممکن ہو سکے، اپنی جھولی اور اپنے دامن کو نیکیوں سے بھر لیں، اور جنت کا راہ ہموار کر لیں،خود بھی جنت کا مستحق بنیں اور اپنے اہل و عیال کو بھی جنت کا مستحق بنائیں.

اللہ تعالیٰ ہمیں اس کی توفیق عطا فرمائے آمین ثم آمین یا رب العالمین

اپنے مضامین اور خبر بھیجیں


 udannewsdesk@gmail.com
 7462884092

ہمیں فیس بک پیج پر بھی فالو کریں


  https://www.facebook.com/udannewsurdu/

loading...
udannewsdesk@gmail.comآپ بھی اپنے مضامین ہمیں اس میل آئی ڈی پر بھیج سکتے ہیں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *