روزہ کے قیمتی لمحات

 

عبد الحنان

 

انسان کا جسم دو چیزوں کا مجموعہ ہے ایک جسم دوسری روح دونوں کے الگ الگ تقاضے ہیں ان دونوں کو تقویت پہونچانے کے لئے خوراک اور غذا کی بھی ضرورت پڑتی ہے لیکن دونوں کے خوراک یکساں نہیں ایک کا تعلق سمائے دنیا سے ہے تو دوسرا کا تحت سماء سے روح کی غذا وہ خدا۔کی فرمانبردای ورسول کی اطاعت اور نیک وخیر کاموں میں بڑھ چڑھ کر حصہ لینا اور انجام دینا ہے یعنی روح کو تقویت دینی امور کی انجام دہی سے پہونچتی ہے تو جسم جو سراپا مٹی ہے اسے مٹی سے نکلنے والے اناج اور پیداوار سے تقویت پہونچتی ہے بقول مولانا عبد الماجد دریابادی

جسم کا دائرہ عمل صرف دو چیزوں کے درمیان محدود ہے کھانے کے کمرے “ڈائننگ ہال ” اور بیت الخلاء اس لئے جسم کی حفاظت کےلئے روحانیت کی فکر کرنا بیحد ضروری ہے ۔

جب تک جسم کا زمام اقتدار روح کے ہاتھ میں ہوتا ہے تب تلک انسان صراط مستقیم پر گامزن رہتا ہے ورنہ اگر اس کے برعکس اگر زمام اقتدار جسم کے ہاتھ میں آجاتا ہے تو انسان حیوانیت پر اتر آتا ہے خیر وشر میں تمیز کی صلاحیت اس میں باقی نہیں رہتی وہ آوارہ جانوروں کی طرح ادھر ادھر منہ مارا پھرتا ہے ۔

روح کی تقویت پہنچانے اور جسم پر غالب کرنے کا سنہرہ موقع وہ رمضان کی بابرکت ساعات ہوتی ہے اس میں خاص اللہ سے لولگائیں گریہ وزاری کریں تلاوت کلام پاک اور ذکر واذکار جیسے عبادات میں رمضان کی قیمتی لمحات گزاریں نمازوں کے ساتھ ساتھ کثرت سے نوافل کا بھی اھتمام کریں اور اس لاک ڈاؤن میں گھر میں رہ کر تلاوت و تراویح جیسے مہتم بالشان عبادات ادا کریں اور اپنے گھر کو رحمت خداوندی سے مالامال کریں گھر میں رہ کر اپنی فکر کے ساتھ اولاد کی بھی فکر کریں اسے بھی تلاوت اور نوافل کی عادت ڈلوائیں اور خاص طور سے رمضان میں گھر کی عورتیں دن بھی امور خانہ داری میں ایسے مشغول رہتی ہے کہ اسے نوافل تو دور تراویح اور تلاوت کا بھی موقع نہیں ملتا ہم جب گھر ہیں تو امور خانہ داری میں اس کا ساتھ دیں ہاٹھ بتائیں اور اس کےلئے بھی تلاوت و ازکار کا موقع فراہم کریں اور اسے بھی تراویح پڑھنے پر ابھاریں آمادہ کریں.

قارئین کرام : اپنے روح کی اصلاح اور قلب کی درستگی کے لئے رمضان کے مبارک مہینے کو غنیمت جانے اور اپنی روح کو تازگی جلا فرحت بخشنے کا سامان مہیا کریں

عبد الحنان

اپنے مضامین اور خبر بھیجیں


 udannewsdesk@gmail.com
 7462884092

ہمیں فیس بک پیج پر بھی فالو کریں


  https://www.facebook.com/udannewsurdu/

loading...
udannewsdesk@gmail.comآپ بھی اپنے مضامین ہمیں اس میل آئی ڈی پر بھیج سکتے ہیں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *