شبِ قدر:ایک تعارف

شب قدر :ایک تعارف

از۔محمد افضل محی الدین

خریج الجامعہ السلفیہ بنارس

 

شب قدر ماہ مبارک کے بہترین عطیات میں سے ایک ہے ۰اسی رات نزول قرآن ہوا۰لوگوں کی رہنمائی کا مکمل سامان فراہم کیا گیا۰شب قدر کو ہزار مہینوں سے افضل قرار دیکر،اس کی عظمت کامنارہ بلند کیاگیا۰لوگوں کی توجہ مبذول کرائی گئی۰لوگوں کو اس کی طرف شوق و رغبت دلایا گیا،کہ لوگ اس رات کی عظمت کو جانیں۰اس کی اہمیت کوسمجھیں۰شب قدر کی فضیلت کے لئے یہی کافی ہے کہ اس شب رب کریم نے نزول قرآن کی نوید سنائی۰وہ قرآن جو لوگوں کے لئے ہدایت ہے،رحمت ہے،برکت ہے،بشارت ہے۰شب قدر میں فرشتوں کا نزول اور جبرئیل امین کی آمد فیضان رحمت کی علامت ہے۰جہاں پر فرشتوں کا نزول ہو وہاں سکینتیں نازل ہوتی ہیں۰لوگ رب کی ردائے رحمت میں ہوتے ہیں ۰شب قدر میں دنیا کے عظیم ترین امور کا فیصلہ ان کے رب کی طرف سے جاری ہوتا ہے۰اور پوری رات امن و سلامتی والی رات ہوتی ہے بھلا کون بد نصیب ہوگا جو اپنے رب کی رحمت سے خود کو دور کرے اور ناکام و نامراد ہو ۔۔۔۔

یہ رہا شب قدر کا مختصر تعارف۔مگر سوال یہ ہے کہ یہ قدر کیا چیز ہے؟؟قدر اللہ کا اٹل فیصلہ ہے،جو اس کے بندوں کو انعام کی شکل میں ملا ہے قدر اللہ کاحکم ہے،جس سےانکار کرنے کی تاب کوئی نہیں لا سکتا۰شب قدر کا سیدھا سادھامفہوم یہ ہے کہ اس رات کو اللہ تعالی بندوں کی تقدیر کا فیصلہ فرماتا ہے اور اس کی تنفید ہوتی ہے۰اس رات کو اللہ تعالی اپنے علم سابق سے فرشتوں کو مطلع کرتا ہے اور اس کے تنفیذ کا حکم جاری کرتا ہے۰قدر کا ایک مطلب اندازہ اور مساوات کا بھی ہے گویا کہ شب قدر لیلۃ الفصل بھی ہے ۔شب قدر میں اللہ بندوں کو عدل و انصاف کے ساتھ جو جتنا مستحق ہوتا ہے نوازتا ہے۰

شب قدر کو شب قدر کیوں کہا گیا ؟وہ اسلئے کہ شب قدر میں اللہ تعالی مخلوقات کی تقدیر کا فیصلہ کرتا ہے،جس میں بندوں کی روزی ،روٹی، اموات ، حوادث دہر وغیرہ کاذکر ہوتا ہے۰شب قدرشرف و عظمت والی رات ہے۰اس رات کو پاکر انسان اللہ کے نزدیک بلند مقام حاصل کر لیتا ہے،جس کا حصول شب قدر کے بغیر ممکن نہیں۰شب قدر میں نیک اعمال کا بجا لانا عظیم شرف ہے۰شب قدر فرشتوں کے نزول سے تنگ پڑ جاتی ہے۰شب قدر میں اللہ تعال نے قدر والی کتاب نازل کی ہے۰شب قدر میں اللہ تعالی اپنی رحمتوں کا نزول اپنے مومن بندے پر کرنے کا فیصلہ کرتا ہے۰

یہ وہ اسباب ہیں جن کی وجہ اس عظیم رات کانام شب قدر پڑا۔

 

شب قدر کے تعارف میں رب کریم نے پوری ایک صورت نازل فرما دی،جس کی تا قیامت تلاوت کی جائے گی کیا اس رات کی عظمت کے لئے یہ کافی نہیں ؟شب قدر کی عظمت کا اندازہ اس بات سے بھی لگایا جا سکتا ہے کہ ہر زمانہ میں اس کی طلب میں اسلاف کوشاں رہے۰ہر ایک نے نصوص میں منصوص علامات یااپنے علم و اجتہاد کے مطابق اس کی تعین کرنے کی جی توڑ کوشش کی اور اس قدر اس کا اہتمام کیا کہ شب قدر کی تعیین کے سلسلہ میں ۶۴اقوال مذکور ہیں۰مزید بر ایں کہ غالب رجحان ۲۳وی شب پھر ۲۷وی شب پھر ۲۱وی شب کو حاصل ہے۰

رات کو اللہ تعالی نے دن پر برتری دی ہے۰دن میں نماز مکروہ ہوتی ہے،جبکہ پوری رات نماز پڑھی جا سکتی ہے رات میں استغفار کا حکم ہے۰ذکر اور تلاوت قرآن کا بہترین وقت رات ہے۰اسراء و معراج رات میں کرائی گئی لوط و موسی علیہماالسلام کواپنی بستی سے رات میں خروج کرنے کا حکم ملا۰یہ ساری چیزیں اس بات پر دال ہیں کہ رات فضل الہی کے حصول کے لئے افضل ترین وقت ہے ۰رہی بات شب قدر کی،جس کی تعریف میں رب کریم نے پوری سورہ نازل کی ہے تو اس کا کوئی جواب نہیں۰

شب قدر یہ بتلاتی ہے کہ حصول اجر کا طالب انسان سعادتوں کے لمحات کو نفحات ربانی سے سیرابی کے لئے ذرہ برابر ضائع نہیں کرتا۰شب قدر یہ بتلاتی ہے کہ رب کی جانب سےاجر جزیل کے وعدے کی تصدیق کیسے کی جاتی ہے۰شب قدر یہ بتلاتی ہے کہ سفر سعادت طئے کرنے کے لئے کیا کچھ نہیں کرنا پڑتا۰شب قدر بتلاتی ہے کہ رب کی رضاجوئی تمام دنیاوی مقاصد سے برتر ہے۰شب قدر یہ بتلاتی ہے کہ سعادتوں کے لمحات میں انسان عبادات کے تئیں بہت زیادہ حریص ہوتا ہے۰شب قدر اخیار اور اشرار میں تمیز پیدا کرتی ہے۰شب قدر توفیق الہی ہے،شب قدر اسے ہی ملتی ہے جس کے ساتھ رب نے خیر کاارادہ کیا ہوتا ہے۰شب قدر کا پانےوالا ایمان کی شیرینی محسوس کر لیتاہے۰شب قدر کی قدر کرنا ذوی القدر لوگوں کا کام ہے۰شب قدر فرشتوں کی صحبت والی رات ہے۰شب قدر اللہ سے ملاقات کا وقت ہے۰شب قدر اللہ سے مناجات کا بہترین موقعہ ہے۰شب قدر حصول جنت کی کنجی ہے۰شب قدر امت محمدیہ کے حق فضیلت ہے۰شب قدر اللہ کا اپنے بندوں سے محبت کی دلیل ہے۰شب قدر اللہ کی جانب سے بندوں پر تیسیر ہے۰شب قدر وعدہ برحق ہے۰

دعا ہے کہ رب العالمین ہم سب کو شب قدر کی قدر کرنے کی توفیق بخشے۰آمین

اپنے مضامین اور خبر بھیجیں


 udannewsdesk@gmail.com
 7462884092

ہمیں فیس بک پیج پر بھی فالو کریں


  https://www.facebook.com/udannewsurdu/

loading...
udannewsdesk@gmail.comآپ بھی اپنے مضامین ہمیں اس میل آئی ڈی پر بھیج سکتے ہیں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *