وقت کی پکار

باسمہ سبحانہ

وقت کی پکار

محمد طاسین ندوی نیپال

اللہ تبارک وتعالی نے ہمارے اوپر بے شمارانعامات کئے ہیں ،جسم و روح کو سلامت رکھا، ذوق سلیم ،نگاہ بلند، سخن دلنواز عطاء فرمایا، فراست کی دولت سے مالا مال کیا کہاں تک تحریر کی جائے المختصریہ کہ سینکڑو ں اور ہزاروں انعامات کسے سرفراز فرمایا، فرمان باری تعالی ہے” إن تعدوا نعمة الله لاتحصوها” اے روئے زمین پر رہنے بسنے والوں اگر تم سب انعامات خدا وندی کو شمار میں لانا چاہو تو ان کو شمار میں نہیں لاسکتے.

ان ہی بیش بہا، مہتم بالشان نعمتوں میں سے ایک نعمت وقت بھی ہے جب امت محمدیہ نے اس کو غیمت جانا قدر کی تو کامیابی مقدر ہوئی بڑے بڑے سلطنت اور حکمراں اور انا پرست گھٹنے ٹیکنے پر مجبور ہوگئے اور اپنے کو سرینڈر کئے بغیر نہ رہ سکے ،جب سے ہم نے بےپرواہی،عدم توجہی، بے قدری کی دبیز چادر اوڑھ لیا تو ہم بھی ایسے بزدل، ڈرپوک،کوتاہ بیں، کورچشم ہوکر رہ گئے کہ ہم نے اپنے کو ان صہیونی،فسطائی قوت وطاقت اورافکارو نظریات کے سامنے ذلیل وخوار ہونے پر مجبور کردیا. اور اس صیاد کے دام فریب میں آکر ہمارے شیر دل نوجوان، شاہین صفت اولوالعزمان،آسمان پر کمندیں ڈالنے والے نے اپنے کو ہلاکت و رذالت کی بھٹی میں جھونک کر اپاہچ کرلیا یہ محض مغربی پالیسی سے مرعوبیت اور اپنے وقت کو صحیح استعمال میں نہ لانے اور وقت کی بوقعتی سے ہے،

اگر ہم اپنے سماج و معاشرہ کا جائزہ لیں تو یہ کچا چٹھا بالکل اظہر من الشمس ہوکر رہ جائیگا کہ نوجوانان اسلام اپنے کو خود اپنے ہاتھوں ذبح کررہے ہیں کیونکہ ان کےپاس وقت کی کوئی قدر ،قیمت و اہمیت نہیں جب کہ وقت کی پکار ہے کہ اے فرزندان توحید و رسالت تمہیں ہوکیا گیا کہ جن اسلاف نے اس دنیا آب و گل کے تاریخ کےرخ کو بدلا سنہرا تاریخ بنایا آج تم ان ہی سے منسوب ہو لیکن اس کے جذبہ دیں ،الفت و محبت، انسجام واتفاق سے کوسوں دور ہو ۔ بنابریں باطل نظام و طاقت نے اپنے شکنجے میں جکڑ لیا ہے جس سے تمہارے لئے آزادی فی الحال مشکل نظر آرہی.

قارئین کرام! ہمارے مدارس ومکاتب جہاں کے فیض یافتہ نہایت ہی عمدگی اور خوش اسلوبی کے ساتھ اپنی قائدانہ صلاحیتوں کا لوہا منواتے تھے ہر میدان میں لوگوں کی نگاہیں ان پر ہی مرکوز ہوا کرتی تھیں اب انہیں ہوا کیا ہے بالکل اذکار رفتہ ہوکر رہ گئے ہیں وقت پکاررہا ہے او آفاق و انفس کی باتیں کرنے والوں آسمان پر کمندیں ڈالنےوالوں ذرا اپنی عظمت رفتہ کو آواز دیناکہ مردم سازی، سماجی انسجام،اچھے اور معزز شخصیات،صاحب عمل و فضل تم ہی ہوا کرتے تھے لیکن جب سےتمہارے سوج بوجھ افکارو نظریات بدل گئے اور اپنے کو کتاب اللہ اور سنت رسول اللہ کا علمبردار نہ بنایا، اللہ کی عظیم نعمت وقت کی اہمیت کو تم نے تار تار کیا تو پسپائی، رسوائی نے اپنا پاؤں ایسا جمایا کہ ساری عظمتیں، بڑائیاں خاک ہوکر رہ گئیں ہر میدان میں تم پیچھے رہنےلگے.

وقت بھی عجب چیز ہے بہتے دریا کے مانند چپ چاپ چلا جاتا ہے جو گھڑیاں گزرجاتی ہیں وہ واپس نہیں آتی گیا وقت پھر ہاتھ آتا نہیں، ہر وقت کے لئے کام اور ہر کام کے لئے وقت مقر رکیا جائے نظام العمل ترتیب دیا جائے لائحہ عمل مرتب کیا جائے تاکہ اپنی باقی ماندہ مختصر زندگی کو اسی کے مطابق بِتانےاور گزارنے کی کوشش کریں پھر جاکران شاء اللہ کامیابی ضرور قدم بوسی کریگی اگر ہم نے خالی اوقات کو غنیمت جانا قدر کیا تو سرخروئی، سعادت مندی ازسرے نو بحال ہوسکتی ہے فرمان نبوی ہے پانچ چیزوں کو پانچ چیزوں سے پہلے غنیمت جانو

ان میں سے یہ بھی کی اپنے فارغ و خالی اوقات کو اپنی مشغولیات سے پہلے غنیمت سمجھو .اب بھی وقت ہے ہم اپنے کو اس لائق بنائیں کہ پھر سےہماری عزت و توقیر عود کر آئے.

کسی شاعر نے کیا اچھی عکاسی کیا ہے

 

وقت کے سائے میں حالات بدل جاتےہیں

دل کیا چیز ہے جذبات بدل جاتے ہیں

 

وقت نے بڑے انا پرستوں کو بھی نہ بخشا ان کے غرور کو نیست ونابود کیا ہے فرعون وقت، قیصر و کسری کی اینٹ سے اینٹ بجا دی ان کی حکمرانی اور طوائف الملوکی کو سبوتاژ کیا.

ہمارے اسلاف نے وقت کی قدر کیا تو اللہ نے ایسے برکات و فضل سے نوازہ کے اپنی صغر سنی میں ہی بہت بڑے بڑے کام کر گزرے.

اس وقت جن حالات سے دنیا جوجھ رہی ہے سارے لوگ اپنے اپنے گھروں میں محصور ہیں باہر نکلنا ،ملنا ملانا سب مشکل کردیا گیا ہے ہمارے پاس بہت وقت ہے اس موقع کو غنیمت سمجھتے ہوئے اپنے اچھے افکار و نظریات کو فروغ دینے اپنی صلاحیتوں کو نکھارنے اور مستقبل میں کچھ کرنے کی اسکیم و پالیسی مرتب کریں جو ہمارے لئےہمارے معاشرہ وساماج کے لئے منارۂ نور ثابت ہو. نہ کے اپنے قیمتی اوقات کو افلام بینی، سیریل، اورڈرامہ و تمثیلچہ کے چکر میں ہلاک و برباد کردیں سینکڑوں ایسے ڈرامے، مسلسلات،افلام اسلامی نام سے اسلامی تاریخ اجاگر کرنے کے لئے کوشاں ہیں لیکن حقیتا یہ اسلام مخالف فکر و نظر کے علم بردار ہیں.ہمیں ان سالف الذکر اشیاء کے بارے میں سنجیدگی سے سوچنا چاہئیے.

اخیرمیں اللہ تعالی سے دعاگوہوں کی ہمیں وقت کی قدرکرنےوالا بنائے اوقات کو مرضیات الہی میں صرف کرنے ولا بنائے .

*آمین یا الہ العالمین*

اپنے مضامین اور خبر بھیجیں


 udannewsdesk@gmail.com
 7462884092

ہمیں فیس بک پیج پر بھی فالو کریں


  https://www.facebook.com/udannewsurdu/

loading...
udannewsdesk@gmail.comآپ بھی اپنے مضامین ہمیں اس میل آئی ڈی پر بھیج سکتے ہیں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *