اگر گٹھ بندھن کی ہار مجلس کی وجہ سے ہوئی ہے تو اچھی بات ہے۔

اگر گٹھبندھن کی ہار مجلس کی وجہ سے ہوئی ہے تو بہت اچھی بات ہے

 

میں نہ تو مجلسی ہوں اور نہ ہی اب تک ہماری فیملی نے کبھی مجلس کو ووٹ کیا ہے لیکن بحیثیت ایک مسلم ووٹر یہ بات سینہ تان کر کہتا ہوں کہ اگر مجلس کی وجہ سے مہاگٹھبندھن کی ہار ہوئی ہے تو یہ اچھی بات ہے اور بہت ہی اچھی بات ہے کہ کم سے کم نام نہاد سیکولر لیڈران خصوصاً متکبر تیجسوی یادو کو اتنا تو احساس ہوگیا ہوگا کہ مجلس بھی ایک چیلنج سے کم نہیں ……..

اگر مجلس سے اتنا ڈر تھا تو پیروی کرنے پر بھی اسے اپنے گٹھبندھن میں شامل کیوں نہیں کیا؟ اگر مان بھی لیتے ہیں کہ مجلس ایک فرقہ پرست پارٹی ہے تو آپ نے (آر جے ڈی) اپنی پارٹی سے مناسب تعداد میں مسلمانوں کو ٹکٹ کیوں نہیں دیا جبکہ فیلڈ میں بہت سے مسلم لیڈران امیدیں وابستہ کیے بیٹھے تھے؟ کیا مہاگٹھبندھن میں اتنا بھی دم نہیں کہ مسلمانوں کے بغیر جیت سکے؟ کیا NDA کو ہرانے کی ذمہ داری صرف مسلمانوں کی ہے؟ آخر یہ نام نہاد سیکولر پارٹیز ہندوؤں کو اپنی جانب راغب کیوں نہیں کر پاتی؟ بھائی! اگر مسلمانوں کے بغیر جیت نہیں سکتے تو انہیں اپنانے سے اتنا ڈرتے کیوں ہو؟؟……

یہی حال یوپی کے گذشتہ وِدھان سبھا چناؤ میں بھی تھا کہ کس طرح بسپا، سپا اور کانگریس نے ڈاکٹر ایوب کی پیس پارٹی کے ساتھ دوغلی پالیسی اختیار کی اور بالآخر گٹھبندھن سے الگ کرنے میں ہی عافیت سمجھی…

سوال بالکل واضح ہے کہ جو لوگ ایک چھوٹی سی مسلم پارٹی کو دل سے برداشت نہیں کر سکتے، انہیں اچھوت اور کسی قابل نہیں سمجھیں تو بھلا وہ کس منہ سے اپنی ہار کا ٹھیکرا اس کے سر پھوڑے… در اصل یہ اپنی ناکامی چھپانے کا ایک ڈھونگ ہے

 

حمزہ شعیب

اپنے مضامین اور خبر بھیجیں


 udannewsdesk@gmail.com
 7462884092

ہمیں فیس بک پیج پر بھی فالو کریں


  https://www.facebook.com/udannewsurdu/

loading...
udannewsdesk@gmail.comآپ بھی اپنے مضامین ہمیں اس میل آئی ڈی پر بھیج سکتے ہیں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *