ہنر مندان دانشمند جب کرنے پے آتے ہیں

ہنر مندان دانشمند جب کرنے پے آتے ہیں

بقلم :عبدالمبین محمد جمیل

28 /10 /2018

محترم قارئین / قاری
بسم اللہ الرحمن الرحیم
دنیا کا کوئی بھی کام عزم و حوصلہ اور جہد مسلسل کے بغیر پایہ تکمیل کو نہیں پہنچ سکتا اگر انسان کامیابی کی سیڑھیوں پر چڑھنے کا خواہاں اور آرزو مند ہے تو اس کے لئے پیشگی تیاری ناگزیر ہے منزل مقصود کو وہی راہی اور مسافر پہونچتا ہے جو تھک کے ہمت نہیں ہارتا
اس دنیا میں نہ جانے کتنے ایسے لوگ ہیں جو اپنے اپنے میدان عمل میں کوشاں ہیں مگر ضروری نہیں کہ سب کے سب کامیاب وکامراں ہوں کیونکہ کچھ اسباب و عوامل اور عوارضات  مثل سد سکندری راہ میں حائل ہوتی ہیں لیکن جو شخص ان سے نبردازمائ کرتے ہوئے آگے بڑھنے کا عزم لیے ہوئے ، ان سے بچ نکلنے کا ہنر جانتا ہو ، راہ کے کانٹوں کی پرواہ کئے بغیر خاردار وادیوں کو عبور کرجاے نرم و نازک پھولوں کی سیج پر وہی چلتا ہے سچ کہا ہے

قدم چوم لیتی ہے خود بڑھ کے منزل

مسافر اگر اپنی ہمت نہ ہارے

اندھیری رات کا مسافر بھی اسی  سوچ  و فکر کے ساتھ  اپنے سفر کی منزلیں قطع کرتا ہے کہ شب دیجور کے بعد سپیدی صبح اس کا استقبال کری گی، آفتاب عالم تاب کی منور کرنیں ظلمت راہ کو یکسر مسترد و معدوم کرکے نشان راہ کو واضح اور نمایاں کردینگی ، راستے میں حائل سنگ  گراں اسکی ہمت وعزیمت کے مقابلے میں پاش پاش ہوجائیگا
دریا کا مسافر گر دریا کی طغیانی اور موج ذخار سے خائف ہوجائے، کوہ پیما پہاڑ کی بلندی اور پرپیچ راہوں سے دلبرداشتہ ہو تو اول الذکر ساحل دریا تک رسائی کرپاے اور نہ ہی ثانی الذکر بلندی پر فتح کا پرچم لہرا سکے

عزیز القدر قارئین

کامیابی اور فوز و فلاح ان ہی لوگوں کا نصیبہ اور مقدر ٹھہرتی ہے جو بلند عزائم، پختہ منصوبے اور بھر پور تیاری سے   میدان عمل میں اترتے ہیں
کسی نے خوب کہا ہے

بقدرالکد تکتسب المعالی

ومن طلب العلی سھر اللیالی

بلندی پر پہونچنے کے لئے راتوں کی نیندیں قربان کرنا پڑتی ہیں مختلف النوع مصائب و مشکلات کا خندہ پیشانی کے ساتھ مواجہہ و مقابلہ کرنا ہوتی ہے مایوسی اور قنوطیت کے دلدل سے باہر آکے کچھ کرگزرنے کی تمنا جب دلوں میں پروان چڑھتی ہیں تبھی منزلیں قریب آتی ہیں بصورت دیگر ناکامی و نامرادی کے قعر عمیق میں پہونچنے کی راہیں سہل و آسان ہو کر شاہراہ ترقی و عروج کو مسدود و محدود کردیتی ہیں

محترم قاری : اللہ رب العزت  بھی محنت اور سعی پیہم سے کئے عمل کا ثمرہ اور نتیجہ بہترین صورت میں عطا کرتا ہے سورہ نجم میں فرمان الٰہی وارد ہے
《وان لیس للانسان الا ما سعی وان سعیہ سوف یری 》

کسی بھی فرد، جماعت، آرگن، قوم و ملت کو وہی ثمرہ اور پھل ملتا ہے جسکی اور جتنا اس نے کوشش اور  سعی کی ہوتی ہے

آپ اپنے گردونواح کے احوال و ظروف پر طائرانہ اور اچٹتی نگاہ ڈالیں یہ بات اظہر من القمر و الشمس ہوجائے گی کہ حالات کی تبدیلی اور تغیر میں لوگوں نےکتنی جانفشانی سے عمل کیا اور اس کے پیچھے  کتنی محنتیں صرف کیں
خود اپنے ہی ملک اور بیرون ملک میں موجود افراد جماعت کا سرسری جائزہ لیجئے آپ پائیں گے کہ ان میں سے جس نے بھی محنت شاقہ اور بھر پور تیاری کے ساتھ کام کیا منزل مقصود نے ان کا قدم چوما، رفعت و سربلندی  نے انکے آنگن میں بسیرا ڈالا

اسی طرح عصر حاضر کے مخترعات، اور ایجادات  کو بروئے کار لاکر جنہوں نے زمانے کی پاوں میں پڑی زنجیروں اور بیڑیوں کی جکڑ اور بندھن سے خود کو آزاد کرکے معنوی تقاضوں کو پورا کیا عظیم المرتبت لوگ آج انکی کامیابی پر سر دھنتے اور حیران ہیں

وہ لوگ جو خوف و سراسیمگی اور شرمندگی کے حصار سے باہر نہیں آنا چاہتے درحقیقت وقت اور مرور ایام کی زنجیروں  میں  پابجولاں ہوتے جارہے ہیں
شاید ایسے لوگوں کے سامنے کامیابی اور بلند درجات پر فائض لوگوں کی تاریخ پر دبیز پردہ پڑگیا  یا انہوں نےتجاہل عارفانہ اور حقیقت حال سے آنکھیں موند کر زندگی بسر کرنے کا مذموم اصول اور قرینہ سیکھ لیا
دنیا کے بڑے سے بڑے علماء ربانیین فلاسفہ،اطباء و جراح ماضی وحال  ( جنکی مسیحائی اور عجوبة الدہر و محیر العقول تحقیقات، ایجادات و مصنوعات اور انکشافات سے دنیا استفادہ کررہی ہے )یونہی یکلخت کامیاب نہیں ہوئے انکی  کامیابی ،ایجادات و تخلیقات کے عقب میں  نہ جانے کتنی پریشانیاں پنہاں اور کتنی آرزوئیں دفن اور نا
معلوم قربانیاں مخفی و پوشیدہ ہونے کے ساتھ   تجربات کے کتنے   تلخ گھونٹ کا  بادل ناخواستہ  پینا بھی شامل ہے
سچ کہا شاعر نے

ہنر مندان دانشمند جب کرنے پے آتے ہیں

سمندر پاٹتے ہیں دشت سے دریا بہاتے ہیں

اپنے مضامین اور خبر بھیجیں


 udannewsdesk@gmail.com
 7462884092

ہمیں فیس بک پیج پر بھی فالو کریں


  https://www.facebook.com/udannewsurdu/

loading...
udannewsdesk@gmail.comآپ بھی اپنے مضامین ہمیں اس میل آئی ڈی پر بھیج سکتے ہیں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *