غزل

*_____غزل_____*
عالم فیضی
مجھ کو مل کے قرار تم سے ہے
رخ پہ سارا نکھار تم سے ہے

دیکھ کر الفتوں کی سر شاری
دل و جاں اب فگار تم سے ہے

غم نہیں مجھ کو اب ذرا کچھ بھی
میرا سارا وقار تم سے ہے

خستہ دل اب کبھی نہیں ہوں گا
رو کا سارا خمار تم سے ہے

سن لو اب پھر سے کہہ رہا ہوں میں
چین تم سے قرار   تم سے ہے

بن گیے جب سے راہ رو میرے
تب سے سارا ہی پیار تم سے ہے

خوب دل بستگی کرو عالم
بزم میں سب بہار تم سے ہے

اپنے مضامین اور خبر بھیجیں


 udannewsdesk@gmail.com
 7462884092

ہمیں فیس بک پیج پر بھی فالو کریں


  https://www.facebook.com/udannewsurdu/

loading...
udannewsdesk@gmail.comآپ بھی اپنے مضامین ہمیں اس میل آئی ڈی پر بھیج سکتے ہیں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *