یہ ایک بہت بڑا لمحہ فکریہ ہے

انوار الحق قاسمی (ناظم نشر و اشاعت جمعیت علماء ضلع روتہٹ نیپال)
تبلیغی جماعت کی حقانیت اپنی جگہ؛مگر اس سے بھی کسی کو انکار نہیں ہےکہ دین و شریعت سےبالکل ناواقف،بعض تبلیغی جماعت سے وابستہ افراد،محض چلہ اور چار مہینہ قریہ قریہ چکر لگانے کی بنا،خود کو امیر شریعت گرداننے لگےہیں اورحاملین شریعت کوحقیرنظروں سے دیکھنےلگےہیں۔موجودہ دور کایہ ایک بہت بڑاالمیہ ہے۔
اب تو تبلیغی جماعت کا دو نیا نام مارکیٹ میں شوکرنے لگاہے،نمبر ایک شورائی جماعت،نمبر دوم سعدی جماعت اورگاہےبگاہے ان دونوں کے مابین ہاتھا پائی بھی ہونے لگی ہے۔
اسی بنا دارالعلوم دیوبند میں ایک طویل عرصہ کےلیے تبلیغی جماعت کی تمام سرگرمیوں پر مکمل پابندی عائد کردی گئی تھی؛مگر پھر بھی یہ لوگ نہیں سمجھ پائے اور آپسی اختلافات کو ختم نہیں کیے؛جس کی بنا اب ہر جگہ شورائی جماعت اور سعدی جماعت کا ہنگامہ ہوتاہے،اور جن مساجد پر شوری والوں کا قبضہ ہے،اس میں سعدی جماعت نہیں آنے دیتے ہیں اور جس میں سعد والوں کی چلتی ہے،اس میں شوری والوں کوقدم تک نہیں رکھنے دیتے ہیں۔
واضح رہے کہ یہ صورت حال صرف ہندوستان ہی کا نہیں ہے؛بل کہ اب ہمارے ملک نیپال میں بھی شوری اور سعد ہونے لگاہے۔
ہندوستان میں ہے کوئی عظیم ہستی،جوان دونوں ناموں کوختم کرکے،ایک نام دےدے اوراس میں پائی جانے والی خامیوں کاخاتمہ کرسکے۔

اپنے مضامین اور خبر بھیجیں


 udannewsdesk@gmail.com
 7462884092

ہمیں فیس بک پیج پر بھی فالو کریں


  https://www.facebook.com/udannewsurdu/

loading...
udannewsdesk@gmail.comآپ بھی اپنے مضامین ہمیں اس میل آئی ڈی پر بھیج سکتے ہیں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *