اے پی پاٹھک نے کرناٹک سے “یرغمال” مزدوروں کو آزاد کرایا

اے پی پاٹھک نے کرناٹک سے “یرغمال” مزدوروں کو آزاد کرایا

دہلی۔بھارتیہ حکومت کے سابق بیوروکریٹ اور  سماجی کارکن اجے پرکاش پاٹھک کی کوششوں سے کرناٹک میں یرغمال بنائے گئے درجنوں مزدوروں کو آزادی مل گئی۔نومبر کے بعد کرناٹک جانے والے چمپارن کے درجنوں مزدور ٹھیکیدار کے چنگل میں یرغمال کر لیا تھا۔  ٹھیکیدار نے نہ اسے پیسے دیے اور نہ ہی گھر آنے دیا۔  ریاست کرناٹک کے الور میں روزی روٹی کمانے کے لیے سریندر یادو نامی شخص نے درجنوں مزدوروں کو کرناٹک کے ٹھیکیدار ناگراج میراٹھی کے حوالے کیا اور خود چلا گیا۔

ٹھیکیدار نہ تو ان کے کام کی اجرت دیتا تھا اور نہ ہی انہیں گھر آنے دیتا تھا۔

متاثرہ کے اہل خانہ نے اے پی پاٹھک سے مدد کی اپیل کی، جو حکومت ہند کے ایک سابق بیوروکریٹ اور بابو دھام ٹرسٹ کے بانی ہیں۔

اے پی پاٹھک نے فوری طور پر کرناٹک ریاست کے ڈی جی پی اور ایس پی بیلگام سے بات کی اور یرغمال بنائے گئے تمام مزدوروں کو ٹھیکیدار سے آزاد کرایا۔کرناٹک کے بیلگام ضلع کے پولس کپتان نے تمام مزدوروں کو خصوصی انتظار گاہوں میں رکھا اور سب کو کھانا اور ادویات فراہم کیں۔اے پی پاٹھک نے کرناٹک پولس اور انتظامیہ کے ساتھ تال میل کرتے ہوئے ہر کسی کی بحفاظت گھر واپسی کے لیے ٹرین ٹکٹوں کے انتظامات کیے گئے تھے۔

اس سلسلے میں اے پی پاٹھک نے بتایا کہ جیسے ہی انہیں اس غیر انسانی واقعہ کا علم ہوا انہوں نے فوری طور پر ریاست کرناٹک کے اعلیٰ پولیس اور انتظامی عہدیداروں سے بات کی اور ان پر دباؤ ڈال کر سب کو آزاد کرایا اور سب کی گھر واپسی کو یقینی بنایا۔

اپنے مضامین اور خبر بھیجیں


 udannewsdesk@gmail.com
 7462884092

ہمیں فیس بک پیج پر بھی فالو کریں


  https://www.facebook.com/udannewsurdu/

loading...
udannewsdesk@gmail.comآپ بھی اپنے مضامین ہمیں اس میل آئی ڈی پر بھیج سکتے ہیں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *