اردو میں سرگرم ویب سائٹس اور پورٹل : ایک تجزیاتی مطالعہ

اردو میں سرگرم ویب سائٹس اور پورٹل : ایک تجزیاتی مطالعہ
✍️ قمر اعظم صدیقی
بانی و ایڈمن ایس آر میڈیا 9167679924
_____________________________
٢٧ مارچ ٢٠٢٢ کو اردو صحافت کے ٢٠٠ سال مکمل ہو گۓ ۔ ان دو سو سالوں میں اردو صحافت نے وقت کی مناسبت سے بہت کچھ دیکھا ، سمجھا اور سیکھا ہوگا۔ ایک وہ دور بھی تھا جب اردو صحافت کو کافی مشکلوں اور دشواریوں کا سامنا کرنا پڑا اور کن کن مشکلات سے گزرنا پڑا ۔ پچھلے زمانے میں نہ آج کے ترقی یافتہ دور کی طرح اتنے وسائل موجود تھے اور نہ ہی رقم کی اتنی فراہمی موجود تھی ۔ آج لوگ بس ایک خواہش پر ایک کلک اور ایک کال کرکے اپنی ضروریات اور خواہش کی تکمیل گھر بیٹھے انجام دے لیتے ہیں ۔ آنے والی نسلیں اور آنے والا وقت ممکن ہے اس سے بھی کہیں زیادہ سہولت کا ہوگا ۔ شروع زمانے میں لوگ ہاتھ سے لکھے ہوۓ اخبار کا مطالعہ کرتے تھے ۔ ہاتھ سے لکھ کر اخبار تیار کرنا کتنا مشکل کام رہا ہوگا اور پھر عوام تک اس کو پہنچانے میں کتنی دشواری رہی ہوگی اس کے متعلق ہر شخص اپنے گھر خاندان اور محلے، بستی کے بڑے بزرگوں سے جانکاری حاصل کر سکتے ہیں ۔ پھر پریس پرنٹنگ کا دور آیا اسکے بعد کمپیوٹرائز پرنٹنگ اور موجودہ وقت میں ہم لوگ ڈیجیٹل ورلڈ کی جانب گامزن ہیں ۔ ڈیجیٹل ورلڈ میں ٹیکنیک کی اتنی فراوانی ہوگئ کہ ہم لوگ دنیا کے کسی بھی کونے میں موجود ہوں کسی بھی وقت ایک موبائل ، کمپیوٹر ، لیپ ٹاپ کے ذریعہ کسی بھی اخبار، رسائل کتاب کو ایک کلک پر پڑھ سکتے ہیں ۔ اور اسی طرح کسی بھی چائنل کے نیوز کو براہ راست دیکھ اور سن سکتے ہیں ۔ اسی ضمن میں پچھلے پانچ سالوں میں اردو صحافت میں ویبسائٹ اور پروٹل نے اپنی کافی مضبوط پکڑ بنائ ہے جس کے ذریعے ہم اور آپ بآسانی اسکے ویبسائٹ اور لنک پر جا کر ملی ، فلاحی ، سیاسی ، سماجی ، دینی مضامین و مقالات اور خبروں کو پڑھ سکتے ہیں ۔
ویبسائٹ اور پروٹل کی دنیا میں تقریباً ٣ درجن سے زائد ناموں کو میں جانتا ہوں جو ادبی دنیا میں اپنا ایک مقام رکھتے ہیں ۔ کم و بیش زیادہ تر ویب سائٹ ، پورٹل ، بلاگ ، پیج ادبی دنیا میں اپنے معیار کے مطابق سرگرم ہیں اور اپنی اردو دوستی کا حق بحسن و خوبی انجام دے رہے ہیں۔
جن جن لوگوں تک میری رسائی ممکن ہو سکی میں نے سبھی لوگوں کو فون اور میسیج کے ذریعہ انکے ویب سائٹ کی تفصیل مانگی اور اپنے اس تحریر میں اس کا ذکر کر رہا ہوں تاکہ ان کے خدمات کو پکی روشنائی میں قلمبند کیا جا سکے۔ زیادہ تر لوگوں نے اپنی تفصیل بھیجی ہے جن کا میں شکر گزار ہوں ۔ جن لوگوں نے نہیں بھیجی ان کو کئ بار اصرار کیا باوجود اسکے تفصیل نہیں آئ ممکن ہے ان کی کوئ مجبوری رہی ہوگی ۔ میں انکا بھی شکر گزار ہوں کہ وہ اردو کی خدمت انجام دے رہے ہیں ۔ جن لوگوں کی تفصیل آئ ہے میں اسے شامل کر رہا ہوں ۔ اور جن کی تفصیل نہیں آئ انکے ویب سائٹ کا نام بھی اس میں درج کیا جائیگا۔

اپنے مضامین اور خبر بھیجیں


 udannewsdesk@gmail.com
 7462884092

ہمیں فیس بک پیج پر بھی فالو کریں


  https://www.facebook.com/udannewsurdu/

loading...
udannewsdesk@gmail.comآپ بھی اپنے مضامین ہمیں اس میل آئی ڈی پر بھیج سکتے ہیں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *