ایک شام ہندی پکھواڑا کے نام

ایک شام ہندی پکھواڑا کے نام

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

ذیشان الہی منیر تیمی

مانو کالج اورنگ آباد

 

 

ہندی زبان و ادب بھارت کی ایک بہترین زبان ہے اس کا خاندانی رشتہ ہند ایرانی سے ملتا ہے پھر پراکرت اور اپبھرنس سے ہوتا ہوا جدید ہند آریائی زبان کے دور میں کھڑی بولی یا پھر ریختہ سے اس کی پیدائش ہوئی اس کا جھکاؤ سنسکرت کی طرف تھا تو یہ زبان جو دیوناگری رسم الخط میں لکھی جاتی ہے ہندی کہلائی اور عربی و فارسی کی طرف جھکاؤ کی وجہ سے ایک اور زبان نکلی جو اردو کہلائی گویا پہلے ہندی اور اردو ایک ہی زبان تھی لیکن 19 وی صدی میں اسے الگ الگ کردیا گیا جس کے متعلق سر سید نے کہا تھا کہ بھارت ایک دلہن ہے اور اس کی دو خوبصورت آنکھیں ہیں اور وہ ہندی اور اردو ہیں

14 ستمبر 1949ء کو اسے قومی زبان کا درجہ دیا گیا چنانچہ اسی ہندی کی یاد میں آج یعنی17/9/2019 کو مانو کالج اور نگ آباد میں ایک قوی سمیلن کا انعقاد کیا گیا اس مجلس کی صدارت کالج کے پرنسپل پروفیسر ڈاکٹر عبد الرحیم سر نے ادا کی جب کے نظامت کی ذمہ داری ڈاکٹر پٹھان وسیم سر نے ادا کی جب کہ منچ پر ڈاکٹر بدر الاسلام سر، ڈاکٹر شہناز میم، ڈاکٹر شاہین میم، عظمی صدیقی میم اور ہاجرہ میم کی موجودگی نے اس پروگرام کو زینت بخشی ۔

اس پروگرام میں کالج کے لگ بھگ تمام طلبہ و طالبات نے حصہ لیا اور بہترین اشعار ہماری سماعت کے حوالے کیئے لیکن بالخصوص میں احمد رضا، قابل، مستحسن، سلمان، خادم الاسلام ،ذیشان الہی، فردوس، نظام، صلاح الدین، شمشاد، علی تیمی، شاہ رخ خان، عبد الملک، نوشین اور رقیہ کے نام قابل ذکر ہیں ۔

آج کا یہ پروگرام مجموعی طور پر کامیاب اور یادگار رہا اخیر میں ہمارے معلمین اور اساتذہ نے بھی اپنے قیمتی اشعار اور نصیحتوں سے نوازا اور ہمیں ہندی زبان کی ترقی میں حصہ لینے کی تلقین کی.

 

ذیشان الہی منیر تیمی

مانو کالج اورنگ آباد

اپنے مضامین اور خبر بھیجیں


 udannewsdesk@gmail.com
 7462884092

ہمیں فیس بک پیج پر بھی فالو کریں


  https://www.facebook.com/udannewsurdu/

loading...
udannewsdesk@gmail.comآپ بھی اپنے مضامین ہمیں اس میل آئی ڈی پر بھیج سکتے ہیں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *