حقیقت میں حقیقت کو حقیقی طور سے دیکھو

حقیقت میں حقیقت کو حقیقی طور سے دیکھو

⁦✍️⁩ : م.ع.اسعد

      ہم میں سے ہر شخص کی زندگی میں ایک ایسا وقت آتا ہے کہ جب ہم ہر شئے سے بیزار ہو جاتے ہیں ، دنیا سب سے مبغوض لگنے لگتی ہے ، ایسا لگتا ہے کہ دنیا کی ہر غیر واجب چیز سے لاتعلق ہوکر ، ایک اللہ سے اپنا تعلق طرح بنا لو کہ پھر کبھی کوئی غم ، غم نہ لگے ، درد بھی اپنی تاثیر کھو بیٹھے اور آلامِ زندگی بھی محبت الٰہی کی بمقابل ہیچ پڑ جائیں ، پھر محبت ہو یا نفرت صرف اللہ ہی کے لئے ہو ، نہ ہم کسی کی محبت کی چاہ ہو ، اور نہ ہی کسی کے آن لائن آنے کا انتظار ، بلکہ فقط رضائے الٰہی ہی مقصدِ زندگانی رہ جائے

     پس وہی وقت ہوتا ہے کہ جب ہم دنیا کو صحیح معنوں میں پہچان پاتے ہیں اور اس کی حقیقت جان پاتے ہیں ، کیونکہ اس وقت ہم دنیا کو اپنی نگاہوں سے نہیں بلکہ حقیقت کی نگاہوں سے دیکھ رہے ہوتے ہیں

     مگر پھر جیسے جیسے وقت گزرتا ہے ، یہ شعور بھی کم ہوتا چلا جاتا ہے یہاں تک ہم پھر سے پہلے کی طرح غافل ہوکر دنیا کی رنگینیوں میں مست و مگن ہو جاتے ہیں اور آخرت کو ایسے بھول جاتے ہیں کہ مانو ہمیں کبھی موت ہی نہیں آنی ، حالانکہ ایک مومن کا مطمح نظر ہمیشہ حصولِ رضائے الٰہی ہونا چاہئے ، اس کو یہ زیب نہیں دیتا کہ وہ اپنے دل میں دنیاوی محبت جو جگہ دے ، کیونکہ یہ دل نہایت قیمتی ہوتا ہے۔ جس میں صرف قیمتی چیز ہی سکون پذیر ہونی چاہئے اور سب سے قیمتی چیز محبت الٰہی ہے ، پس یہی چیز دل میں رہنے کی سب سے زیادہ مستحق ہے ، اور اس کو چھوڑ کر دنیا ( کہ جس کی قیمت مچھر کے پر کے برابر بھی نہیں ) کی محبت کو دل میں جگہ دینا ، یہ سراسر دل کے ساتھ ظلم بھی ہے ، اور خالق کے حقوق میں کوتاہی بھی ، حالانکہ ایک سچا مومن کبھی ظالم نہیں ہوا کرتا ، صرف غیر ہی نہیں بلکہ وہ خود بھی اپنے ظلم سے ہمیشہ محفوظ ہوتا ہے ،

       لہٰذا اپنے آپ کو پہچانیں ، دنیا کی حقیقت کو جانیں ، اور نہ اپنے دل پر ظلم کریں نہ ہی رب کے حقوق میں کوتاہی بلکہ مومن ہیں تو مومنانہ زندگی گزاریں ، شان سے جئیں اور مریں تو اس طرح کے آنے والوں کے لئے ایک اعلیٰ مثال بن جائیں

حقیقت میں حقیقت کو ، حقیقی طور سے دیکھو

یہ دنیا ہے ، جسے دیکھو تو تھوڑی غور سے دیکھو

اپنے مضامین اور خبر بھیجیں


 udannewsdesk@gmail.com
 7462884092

ہمیں فیس بک پیج پر بھی فالو کریں


  https://www.facebook.com/udannewsurdu/

loading...
udannewsdesk@gmail.comآپ بھی اپنے مضامین ہمیں اس میل آئی ڈی پر بھیج سکتے ہیں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *